Tuesday, May 5, 2009

خاک در خاک تری ہجرت و ایثار پہ خاک

’’شہر آشوب‘‘


خاک در خاک تری ہجرت و ایثار پہ خاک
 خاک در خاک ترے سب درو دیوار پہ خاک


 بستیاں خوں میں نہاتی ہیں چمن جلتے ہیں
 خاک در خاک تری گرمی ء گفتار پہ خاک


 اس سے بہتر تھا کہ اقرار ہی کرلیتا تو
 خاک در خاک تری جراءت ِ انکار پہ خاک


 شام تک دھول اڑاتے ہیں سحر تک خاموش
 خاک در خاک ترے کوچہ و بازار پہ خاک


 خون آلود مصلّے ، صفیں لاشوں سے اٹی
 خاک در خاک ترے جبّہ و دستار پہ خاک


 آئنے عکس میسر نہیں تجھ کو بھی تو پھر
خاک در خاک ترے جوہرِ زنگار پہ خاک


 لحنِ دل تو بھی اسی شور میں شاداں ہے تو پھر
خاک در خاک ترے نغمہ و مزمار پہ خاک


 کنجِ محرومی سے نکلو کسی جنگل کی طرف
خاک در خاک پڑے شہرِ ستمگار پہ خاک 


 گر ترے شعر میں شامل ہی نہیں سوز و گداز
 خاک در خاک ترے لہجہ و تکرار پہ خاک


 م۔م۔مغل

16 comments:

  1. خاک در خاک میری سمجھ پہ خاک
    جو اتنی لمبی ہجو بھی پڑھ کہ سمجھ نہ سکا
    اس دماغ کی بے دماغی پہ خاک
    واللہ صاحب یہ سمجھ نہیں آئی کی یہ ہجو کس کی شان کہی گئی ہے ؟؟؟؟

    ReplyDelete
  2. جہاں میری نیچی سوچ پرواز کر رہی ہے وہون سے تو اس کے الگ ہی مطلب نکل رہے ہیں
    اگر ایسا ہے تو ہمیں افسوس ہے کہ پھر تو دشمنیاں ہو جائیں گی
    کیا ہی بہتر ہو کہ اس کی سلیس اردو بھی ساتھ ایک خانہ بنا کر اس میں لکھ دی جائے
    شائد سمجھنے میں کچھ آسانی رہے کہ اتنی ڈاڈی اردو اور ہجو کا مجھے تجربہ ہے نا واقفیت
    ایک تو میں غیر ادبی بندہ اور اوپر سے ڈفر بھی
    تو اس واسطے ایڈوانس معذرت

    ReplyDelete
  3. جہاں میری نیچی سوچ پرواز کر رہی ہے وہون سے تو اس کے الگ ہی مطلب نکل رہے ہیں
    اگر ایسا ہے تو ہمیں افسوس ہے کہ پھر تو دشمنیاں ہو جائیں گی
    کیا ہی بہتر ہو کہ اس کی سلیس اردو بھی ساتھ ایک خانہ بنا کر اس میں لکھ دی جائے
    شائد سمجھنے میں کچھ آسانی رہے کہ اتنی ڈاڈی اردو اور ہجو کا مجھے تجربہ ہے نا واقفیت
    ایک تو میں غیر ادبی بندہ اور اوپر سے ڈفر بھی
    تو اس واسطے ایڈوانس معذرت

    ReplyDelete
  4. خون آلود مصلّے ، صفیں لاشوں سے اٹی
    خاک در خاک ترے جبّہ و دستار پہ خاک

    خوب!

    ReplyDelete
  5. مجھے تو رشک آتا ہے، خیالات کی ایسی آمد پہ۔۔

    وہ کیا کہا تھا حضرت غالب نے؟

    آتے ہیں غیب سے۔۔۔ ؟

    ReplyDelete
  6. اردو محفل پر تو لکھ چکا مغل صاحب، یہاں بھی عرض کیے دیتا ہوں کہ بہت اچھے اشعار ہیں، داد قبول کیجیئے محترم۔

    ReplyDelete
  7. بہت خوب لکھا لگتا ہے آج کے حالات کے عین مطابق اگر میں غلط ہوں تو برائے مہربانی تصح فرما دیں
    بستیاں خوں میں نہاتی ہیں چمن جلتے ہیں
    خاک در خاک تری گرمی ء گفتار پہ خاک

    اس سے بہتر تھا کہ اقرار ہی کرلیتا تو
    خاک در خاک تری جراءت ِ انکار پہ خاک

    ReplyDelete
  8. سلام قبلہ آپ کا نام ہمیں ملانے کا باعث بن گیا ماشااللہ بہے خوبصورت بلاگ ہے اور جو اس کی زنیت ہے اس کا تو جواب نہیں قسم سے دل خوش ہو گیا ۔گو کہ اتنی خالص اردو کی سمجھ نہیں ہمیں مگر پڑھا ہو ا کبھی کام آ ہی جاتا ہے انشااللہ آمد ہوتی رہے گی اور فیض بھی ملتا رہے گا۔ واسلام کامران اصغر کامی

    ReplyDelete
  9. بہت خوب دل خوش ہو گیا آپ کے بلاگ کا چکر لگا کے۔

    ReplyDelete
  10. Jafar said...
    خاک در خاک میری سمجھ پہ خاک
    جو اتنی لمبی ہجو بھی پڑھ کہ سمجھ نہ سکا
    اس دماغ کی بے دماغی پہ خاک
    واللہ صاحب یہ سمجھ نہیں آئی کی یہ ہجو کس کی شان کہی گئی ہے ؟؟؟؟
    May 5, 2009 4:02 PM
    ----------------------------------------------------------------
    بہت بہت شکریہ جعفر صاحب،
    صاحب ایک بار پھر غور کیجے گا، ممکن ہے آپ جان لیں کہ کس کی ’’شان ‘‘ میں کیا کہا گیا ہے۔
    تشریف لانے اور محبتؤں سے نوازنے کو ممنون ہوں ۔
    سدا خوش رہیں جناب
    والسلام

    ----------------------------------------------------------------
    DuFFeR - ڈفر said...
    جہاں میری نیچی سوچ پرواز کر رہی ہے وہون سے تو اس کے الگ ہی مطلب نکل رہے ہیں
    اگر ایسا ہے تو ہمیں افسوس ہے کہ پھر تو دشمنیاں ہو جائیں گی
    کیا ہی بہتر ہو کہ اس کی سلیس اردو بھی ساتھ ایک خانہ بنا کر اس میں لکھ دی جائے
    شائد سمجھنے میں کچھ آسانی رہے کہ اتنی ڈاڈی اردو اور ہجو کا مجھے تجربہ ہے نا واقفیت
    ایک تو میں غیر ادبی بندہ اور اوپر سے ڈفر بھی
    تو اس واسطے ایڈوانس معذرت
    May 5, 2009 7:01 PM
    ----------------------------------------------------------------
    ڈفر صاحب ، بہت شکریہ ۔ حوصلہ افزائی کو ممنون ہوں، دشمنیاں کچھ نہیں ہوتی ، اختلاف ہونا اور بات ہے ، کوشش کرتا ہوں کہ سلیس اردو میں وضاحت کردیا کروں۔
    معذرت کی کوئی ضرورت نہیں ، آپ کی رائے میرے لیے مقدم ہے۔
    سدا خوش رہیں جناب۔، والسلام

    ReplyDelete
  11. اپنی شان میں کہی تھی یہ ہجو۔۔۔۔
    :grin:
    واللہ آپ کے بلاگ پر آنے سے پہلے شیروانی پہننے اور پان منہ میں رکھنے کو جی کرتا ہے۔۔۔
    میں نے اپنے ڈگ دماغ پر زور دیا ہے اور کچھ سمجھ آگئی ہے ۔۔۔
    اگر میں‌ ٹھیک سمجھا ہوں تو پھر آپ اپنی خیر منائیں۔۔۔

    ReplyDelete
  12. گوکہ القلم پر لکھ چکا ہوں لیکن یہاں بھی لکھنا ضرور ہے حرف مکرر نہ سمھیے گا
    بہت خوب لکھا ہے آپ نے
    آپ کے لکھے سے تحریک ملی تو اسی آہنگ میں ایک تکا لگادیا

    شاعری لذت گفتار سے آگے نہ بڑھی
    خاک در خاک لب و گیسو و رخسار پہ خاک

    ReplyDelete
  13. شکریہ جعفر صاحب آپ یوں ہی سمجھ لیں کہ میں نے اپنے لیے ہی یہ ہجو واسوخت یا شہر آشوب کہی تھی، حوصلہ افزائی کے لیے ممنون ہوں امید ہے کرم فرماتے رہیں گے۔
    والسلام

    ReplyDelete
  14. کچھ عرصہ پہلے جب یہ اردو محفل اور پھر یہاں شائع کی تھی تب بھی خوب تھی، فیس بک پر آج اسید کیہر نے دوبارہ یاد دلائی تو دوڑا چلا آیا، بلاشبہ وہی لطف پایا ۔ بہت خوب جناب، واقعی لاجواب

    ReplyDelete
  15. بہت بہت شکریہ عمر احمد بنگش صاحب
    بڑی محبت جناب ، اسید سے ایک مشاعرے میں ملاقات رہی گزشتہ اتوارکو وہاں میں یہ غز ل دوبارہ پڑھی تھی دوستوں خوب حوصلہ افزائی کی ، بہت بہت شکریہ ، مالک و مولیٰ سلامت رکھے ، آمین

    م۔م۔مغل

    ReplyDelete