Wednesday, April 15, 2009

شبیر نازش، عزیز مرزا، نیر ندیم

شبیر نازش، عزیز مرزا، نیر ندیم شبیر نازش غزل سرا غزل

زندگی زرد زرد چہروں میں بھیک ڈالی گئی ہے کاسوں میں ہم سے کیا پوچھتے ہو رنگِ جہاں ہم تو زندوں میں ہیں نہ مردوں میں سوئے ہوتے ہیں اپنے گھر میں ہم پائے جاتے ہیں ان کی گلیوں میں اب کتابوں میں بھی نہیں ملتا پیار ہوتا تھا پہلے لوگو ں میں‌ چھان دیکھی ہے مشرقین کی خاک آن بیٹھا ہوں تیرے قدموں میں یا الہی بس اس کی ایک جھلک جس کی خوشبو ہے میری سانسوں میں نازش ایسا قلندرانہ مزاج کوئی ہوگا تو ہوگا صدیوں میں شبیر نازش ----------------------

عزیز مرزا غزل سرا کلام تحریری شکل میں بہت جلد پیش کیا جائے گا۔ نیر ندیم ، سلام بحضور امام حسین رضی اللہ تعالیِ عنہ کلام تحریری شکل میں بہت جلد پیش کیا جائے گا۔

No comments:

Post a Comment

بلاگ اسپاٹ پر فی الحال اردو کلیدی تختے کی تنصیب ممکن نہیں آپ سے التماس ہے کہ اردو میں تبصرہ پوسٹ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کر دیں بہت شکریہ، اظہاریہ نویس ۔